عنوان: کیا حضرت معاویہ رضی اللہ تعالی عنہ کا کاتب وحی ہونا روایات سے ثابت ہے؟(107691-No)

سوال: کیا حضرت معاویہ رضی اللہ تعالی عنہ کا کاتب وحی ہونا روایات سے ثابت ہے، وضاحت فرمادیں؟

جواب: حضرت معاویہ رضی اللہ تعالی عنہ کا شمار کاتبینِ وحی میں ہوتا ہے اور یہ بات حدیث اور تاریخ کی متعدد روایات سے ثابت ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی الصحیح لمسلم:

حدثنی ابن عباس ؓ قال کان المسلمون لاینظرون الی ابی سفین ولایقاعدونہ فقال للنبیﷺ یا نبی ﷲ ثلاث اعطینھن قال نعم قال عندی احسن العرب واجملہ ام حبیبۃ بنت ابی سفیان زوجکھا قال نعم قال ومعاویۃ تجعلہ کاتبا بین یداک قال نعم۔

(ج: 2، ص: ، 303)

وفی تاریخ الخلفاء للسیوطی:

معاویۃ بن ابی سفیان صخر بن حرب بن امیۃ …… اسلم ھو وابوہ یوم فتح مکۃ ……وکان احد الکتاب لرسول اﷲﷺ۔

(ص: 194)

وفی البدایۃ والنھایۃ:

وھو معاویۃ بن ابی سفیان صخر بن حرب ……خال المومنین وکاتب وحی رسول رب العالمین …قال معاویۃ :ولقد دخل علی رسول اﷲﷺ مکۃ فی عمرۃ القضا وانی لمصدق بہ ثم لما دخل عام الفتح اظھرت اسلامی فجئتہ فرحب بی، وکتبت بین یدیہ۔

(ج: 8، ص: 120)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 345
kia hazrat muawiya razi allaho anho ka kaatib e wahi hona riwayat say sabit hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Interpretation and research of Ahadees

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.