عنوان: یادگار کے طور پر کمرے میں جاندار کی تصویر لگانا(107869-No)

سوال: مفتی صاحب ! اگر کمرے میں کسی سمت میں نماز نہیں پڑھی جاتی ہو تو کیا اس سمت فیملی تصاویر لگا سکتے ہیں؟

جواب: واضح رہے کہ بلا ضرورت شرعیہ جاندار کی تصویر بنانے اور اسے گھر وغیرہ میں لگانے کے متعلق احادیث مبارکہ میں سخت وعیدیں آئی ہیں، اور ایسے گھروں میں جہاں بلاضرورت جاندار کی تصویر موجود ہو، وہاں رحمت کے فرشتے نہیں آتے، لہذا بلاضرورت شرعیہ کسی بھی جان دار کی تصویر بنانا اور اسے گھر میں لگانا ناجائز اور حرام ہے، چاہے اس کمرے میں نماز نہیں پڑھی جاتی ہو، البتہ جاندار کے بجائے قرآنی آیات یا کسی غیر جاندار شے کی تصویر گھر میں لگا سکتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

لما فی صحیح البخاري:

"عن عبد اللّٰہ ابن مسعود رضي اللّٰہ عنہ قال: سمعت النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم یقول: إن أشد الناس عذابًا عند اللّٰہ یوم القیامۃ المصورون"

(ج:2، ص:880، کتاب اللباس، باب عذاب المصورین یوم القیامۃ، رقم الحدیث: 5950، دار الفکر، بیروت)

وفی البحر الرائق:

"قال أصحابنا وغیرہم من العلماء: تصویر صور الحیوان حرامٌ شدید التحریم وہو من الکبائر؛ لأنہ متوعد علیہ بہٰذا الوعید الشدید المذکور في الأحادیث، یعني مثل ما في الصحیحین عنہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم ’’أشد الناس عذابًا یوم القیامۃ المصورون، یقال لہم أحیوا ما خلقتم‘‘ … وسواء کان في ثوب أو بساطٍ أو درہم ودینارٍ وفلس وإنائٍ وحائطٍ وغیرہا، فینبغي أن یکون حرامًا لا مکروہًا إن ثبت الإجماع أو قطیعۃ الدلیل لتواترہ

(ج:2، ص:48، کتاب الصلاۃ، باب ما یفسد الصلاۃ وما یکرہ فیہا، ط. زکریا)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 199
yaadgaar kay tour par kamray mai jaandar ki tasweer lagana

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.