عنوان: گاڑی سے ٹکرا کر کبوتر مر جائے تو اس کا کیا کفارہ ادا کرنا پڑے گا؟(107898-No)

سوال: السلام علیکم، حضرت ! میری گاڑی سے ایک کبوتر ٹکرا کرمر گیا، کیا کفارہ ادا کرنا ہوگا؟

جواب: واضح رہے کہ پرندوں کو بلا عذر مارنا یا تکلیف دینا شریعت میں منع ہے، ایسا کرنے والے پر لازم ہے کہ وہ اللہ تعالی کے حضور سچی توبہ کرے۔

صورتِ مسئولہ میں آپ نے کبوتر کو قصدا نہیں مارا ہے، بلکہ اتفاقاً گاڑی کے سامنے آجانے کے سبب اس کی موت واقع ہوئی ہے، لہٰذا اس صورت میں آپ پر کوئی کفارہ لازم نہیں ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


لما فی الدر المختار مع الرد المحتار:

الصید مباح اِلّا للتلہیّ۔

( هو مباح ) بخمسة عشر شرطاً مبسوطة في العناية، وسنقرره في أثناء المسائل ( إلا ) لمحرم في غير المحرم أو ( للتلهي ) كما هو ظاهر (أو حرفةً) على ما في الأشباه.

(ج:6، ص:462، کتاب الصید، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 199
gaari say takra kar kabootar marjaye tw uska kia kaffara ada karna parega?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Miscellaneous

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.