عنوان: جس ٹی شرٹ (T Shirt) پر کارٹون بنا ہوا ہے٬ اس کی خرید وفروخت کا شرعی حکم(107964-No)

سوال: مفتی صاحب! جس ٹی شرٹ پر کارٹون کی تصویر بنی ہوئی ہو، تو اس ٹی شرٹ کو خرید و فروخت کرنے کا کیا حکم ہوگا؟

جواب: واضح رہے کہ جس کارٹون کے چہرہ کے اعضاء کان٬ ناک اور آنکھیں وغیرہ بنی ہوئی نہ ہوں٬ یا یہ چیزیں بالکل غیر واضح ہوں٬ وہ شرعا جاندار کے حکم میں نہیں ہے٬ لیکن سوال کے ساتھ منسلکہ ٹی شرٹ (T Shirt) پر کارٹون کی منہ اور آنکھیں واضح طور پر نظر آرہی ہیں٬ اس لئے اس کو کسی چیز پر پرنٹ کرنا جائز نہیں ہے۔

تاہم مذکورہ صورت میں چونکہ اصل مقصود ٹی شرٹ کی خرید و فروخت ہے٬ اس لیے اس ٹی شرٹ کی خرید وفروخت کو حرام نہیں کہا جا سکتا٬ البتہ چونکہ ضمناً اس میں جاندار کی تصویر بھی نمایاں ہے٬ اس لئے ایسی ٹی شرٹ (T Shirt) کی خرید و فروخت سے بچنا چاہئیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دلائل:

لما فی صحیح البخاري:

"عن عبد اللّٰہ ابن مسعود رضي اللّٰہ عنہ قال: سمعت النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم یقول: إن أشد الناس عذابًا عند اللّٰہ یوم القیامۃ المصورون"

( باب عذاب المصورین یوم القیامۃ، رقم الحدیث: 5950)

وفی البحر الرائق:

"قال أصحابنا وغیرہم من العلماء: تصویر صور الحیوان حرامٌ شدید التحریم وہو من الکبائر؛ لأنہ متوعد علیہ بہٰذا الوعید الشدید المذکور في الأحادیث، یعني مثل ما في الصحیحین عنہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم ’’أشد الناس عذابًا یوم القیامۃ المصورون، یقال لہم أحیوا ما خلقتم‘‘ … وسواء کان في ثوب أو بساطٍ أو درہم ودینارٍ وفلس وإنائٍ وحائطٍ وغیرہا، فینبغي أن یکون حرامًا لا مکروہًا إن ثبت الإجماع أو قطیعۃ الدلیل لتواترہ

(ج:2، ص:48، باب ما یفسد الصلاۃ وما یکرہ فیہا، ط. زکریا)

وفی الدر المختار مع الشامی:

"وظاہر کلا النووي الإجماع علی تحریم تصویر الحیوان وقال سواءٌ صنعہ لما یُمْتَہَنُ أو لغیرہ فصنعتہ حرام بکل حل وسواء کان في ثوب أو بساط أو دراہم أو إناء أو حائط"

(۲/۴۱۶، مکروہات الصلاة)

کذا فی تبویب الفتاوی جامعہ دارالعلوم کراچی: (۴۷/١۸۰٦)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Views: 131

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Business & Financial

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com