عنوان: کیا سال کے دوران تجارت کی نیت سے خریدے گئے بکروں کو زکوۃ میں شامل کیا جائے گا؟(108274-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! ایک آدمی نے تقریباً 60000 کے بطورِ تجارت کے لیے ماہ محرم میں بکرے لیے، جن کو اس نے بقرا عید پر بیچنا ہے۔ سوال یہ ہے کہ اس کے پاس ان بکروں کے علاوہ ایک سونے کی انگوٹھی ہے، اس کے علاوہ کچھ بھی نہیں ہے، اور زکوٰۃ کی فرضیت کا مہینہ شوال ہے۔ کیا زکوة کی ادائیگی میں ان بکروں کو شامل کیا جائے گا؟ اگر شامل کیا جائے گا، تو موجودہ قیمت پر شامل کیا جائے گا یا قیمت خرید پر شامل کیا جائے گا؟

جواب: واضح رہے کہ مالِ تجارت میں بھی زکوۃ واجب ہوتی ہے۔
صورت مسئولہ میں آپ نے بکروں کو تجارت کی نیت سے خریدا تھا، لہذا آپ سونے کی انگوٹھی اور ان بکروں کی قیمت کو ماہِ شوال میں فرض ہونے والی زکوۃ کے حساب میں قیمتِ فروخت کے اعتبار سے شامل کریں گے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


الشامیۃ:(272/2،ط:دارالفکر)
(وما اشتراه لها) أي للتجارة (كان لها) لمقارنة النية لعقد التجارة۔۔الخ

وفیہ ایضا:(286/2،ط:دارالفکر)
ﻭﺗﻌﺘﺒﺮ اﻟﻘﻴﻤﺔ ﻳﻮﻡ اﻟﻮﺟﻮﺏ، ﻭﻗﺎﻻ ﻳﻮﻡ اﻷﺩاء ﻭﻓﻲ اﻟﺴﻮاﺋﻢ ﻳﻮﻡ اﻷﺩاء ﺇﺟﻤﺎﻋﺎ، ﻭﻫﻮ اﻷﺻﺢ، ﻭﻳﻘﻮﻡ ﻓﻲ اﻟﺒﻠﺪ اﻟﺬﻱ اﻟﻤﺎﻝ ﻓﻴﻪ ﻭﻟﻮ ﻓﻲ ﻣﻔﺎﺯﺓ ﻓﻔﻲ ﺃﻗﺮﺏ اﻷﻣﺼﺎﺭ ﺇﻟﻴﻪ ﻓﺘﺢ.

الھندیۃ:(175/1،ط:دارالفکر)
ومن كان له نصاب فاستفاد في أثناء الحول مالا من جنسه ضمه إلى ماله وزكاه المستفاد من نمائه أولا وبأي وجه استفاد ضمه سواء كان بميراث أو هبة أو غير ذلك۔۔۔الخ

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 122
kia saal kay doran tijarat ki niyyat say khareeday gaye bakron ko zakat mai shamil kia jaiga?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.