عنوان: تمباکو کا عشر ادا کرتے وقت پکانے کا خرچہ منہا نہیں کیا جائے گا(108293-No)

سوال: مفتی صاحب ! تمباکو کو آگ پر پکا کر پکانے کا خرچہ منہا کر کے عشر نکالا جائے گا یا خرچہ منہا کیے بغیر عشر نکالا جائے گا؟

جواب: یاد رہے کہ عشر میں فصل کاٹنے کے وقت کی قیمت کا اعتبار ہوتا ہے، پکانے کے بعد بڑھی ہوئی قیمت کا اعتبار نہیں، لہذا فصل کاٹنے کے وقت کی قیمت کے حساب سے عشر ادا کیا جائے گا اور اس سے پکانے کا خرچہ منہا نہیں کیا جائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم:(سورۃالانعام،الایۃ:141)
وَهُوَ الَّذِي أَنشَأَ جَنَّاتٍ مَّعْرُوشَاتٍ وَغَيْرَ مَعْرُوشَاتٍ وَالنَّخْلَ وَالزَّرْعَ مُخْتَلِفًا أُكُلُهُ وَالزَّيْتُونَ وَالرُّمَّانَ مُتَشَابِهًا وَغَيْرَ مُتَشَابِهٍ ۚ كُلُوا مِن ثَمَرِهِ إِذَا أَثْمَرَ وَآتُوا حَقَّهُ يَوْمَ حَصَادِهِ ۖ وَلَا تُسْرِفُوا ۚ إِنَّهُ لَا يُحِبُّ الْمُسْرِفِينَ۔

الہندیۃ:(186/1،الباب السادس فی زکاۃالزرع والثمار،ط:دارالفکر)
ویجب العشر عند ابی حنیفۃ رحمہ اللہ تعالیٰ فی کل ما تخرجہ الارض من الحنطۃ والشعیر والدحن والارز واصناف الحبوب والبقول والریاحین والاوراد والرطاب وقصب السکر والذریرۃ والبطیخ والقثاء والخیار والباذنجان والعصفر واشباہ ذلک ممالہ ثمرۃ باقیۃ او غیر باقیۃ قل او کثر۔

الھدایۃ:(باب زكاة الزروع والثمار،107/1،ط:داراحیاءالتراث العربی)
قال ابوحنیفۃ رحمۃ اللّٰہ علیہ فی قلیل ما اخرجتہ الارض وکثیرہ العشر

کذا فی الفتاوی دارالعلوم دیوبند:رقم الفتویٰ:159813

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 120

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.