عنوان: کاروبار میں لگی ہوئی اصل رقم کی مالیت اور نفع دونوں پر زکوٰۃ واجب ہے(108310-No)

سوال: مفتی صاحب ! ہم نے ایک جگہ کاروبار میں تین سے چار لاکھ روپے لگائے ہیں، پوچھنا یہ ہے کہ کیا ان پر زکوة ہے اور اگر زکوة ہے تو پوری رقم پر یا منافع اور نقصان پر بھی ہے؟

جواب: واضح رہے کہ کاروبار میں لگائے ہوئے سرمائے اور اس کے ذریعے حاصل شدہ نفع دونوں پر زکوٰۃ واجب ہوتی ہے، لہذا سال پورا ہونے پر اس وقت موجود سرمایہ اور اخراجات منہا کرنے کے بعد حاصل ہونے والے نفع پر زکوٰۃ واجب ہوگی۔

دلائل:




الشامیۃ:(303/2،ط:سعید)
"قیمۃ العروض للتجارۃ تضم إلی الثمنین لأن الکل للتجارۃ وضعاً وجعلاً".

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاءالاخلاص،کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 186
karobar me / mey lagi hui / hue asal raqam ki maliat or nafa dono per / par zakat wajib he / hay

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.