عنوان: زیب و زینت کے لیے ہونٹوں پر لپ سٹک (lip stick) لگانے کا حکم(108980-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! ہم نے ایک عالم دین سے سناہےکہ لپ اسٹک لگانے والی عورتوں کے ہونٹ قینچی سے کاٹے جائیں گے، اس قول کی تصد یق مطلوب ہے، رہنمائی فرمائیں۔

جواب: واضح رہے کہ عورت کا اپنے خاوند کے لیے زیب وزینت اختیار کرنے کے لیے ہونٹوں پر لپ سٹک (lip stick) لگانا جائز ہے، شریعت میں اس کی کوئی ممانعت نہیں ہے۔
البتہ اگر لپ اسٹک تہہ دار ہو کہ کھال تک پانی نہ پہنچتا ہو، تو وضو اور غسل کرتے وقت اس کو ہٹانا ضروری ہوگا، ورنہ وضو اور غسل درست نہیں ہوگا۔
باقی ان عالم دین نے مذکورہ ہونٹوں کے کاٹے جانے والی بات کس تناظر اور دلیل کی روشنی میں بیان کی ہے، وہ ان سے پوچھ کر ارسال فرمائیں، ان شاء اللہ اس کا جواب دے دیا جائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (فرض الغسل، 154/1، ط: دار الفکر)
"ولا یمنع الطہارۃ ونیم وحناء ودرن ووسخ وتراب في ظفر مطلقا ولا یمنع ما علی ظفر صباغ۔ وقیل: إن صلبا منع وہو الأصح".
"قولہ: إن کان صلبا: أي إن کان ممضوغا مضغا متأکدا بحیث تداخلت أجزاؤہ وصار لزوجۃ وعلاکۃ کالعجین.…، وقال: الامتناع نفوذ الماء مع عدم الضرورۃ والحرج".

واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 364
zeb wa zeenat ke / kay liye honto / honton per / par lip stick / surkhe lagane ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Women's Issues

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.