عنوان: دکان پر سودا کرنے کی وجہ سے دکان دار کا کمیشن کا مطالبہ کرنے کا حکم(9802-No)

سوال: اگر ہم کسی کی دکان پر کھڑے ہو کر کسی پارٹی سے سودا کرلیں، تو کیا دکاندار کو اس کی دکان کے سامنے سودا کرنے کی وجہ سے نفع دینا ہوگا؟

جواب: واضح رہے کہ کمیشن کوئی سروس فراہم کرنے پر لیا جاتا ہے، اور دکان پر سودا ہونے کی صورت میں دکاندار کی طرف سے کوئی سروس فراہم نہیں کی جارہی، اور نہ ہی دکان پر سودا کرنے کی صورت میں کمیشن کے سلسلے میں پہلے سے کوئی معاہدہ ہوا تھا، اس لیے مذکورہ صورت میں دکان والے کا کمیشن کا مطالبہ کرنا درست نہیں، البتہ اگر اس مارکیٹ میں یہ چیز معروف اور رائج ہو کہ ایسی صورت میں کمیشن لیا جاتا ہو، تو پھر معروف کمیشن کا مطالبہ کیا جاسکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

تفسیر القرطبي: (150/5، ط: دار الکتب المصریة)
قوله تعالي: (بالباطل) ای بغیر حق، ووجوہ ذلک تکثر علی ما بیناہ.

تفسیر الخازن: (366/1، ط: دار الکتب العلمیة)
قوله عز وجل (بالباطل) یعنی بالحرام الذی لا یحل فی الشرع کالربا والقمار والغصب والسرقة والخیانة وشہادة الزور واخذ المال بالیمین الکاذبة ونحو ذلک. ۔۔۔ وقیل یدخل فی الاکل المال بالباطل جمیع العقود الفاسدۃ.

مرقاة المفاتيح شرح مشكاة المصابيح: (1974/5، ط: دار الفکر)
(لا يحل مال امرئ) أي: مسلم أو ذمي (إلا بطيب نفس) أي: بأمر أو رضا منه.

شرح مختصر الطحاوي للجصاص: (387/3، ط: دار البشائر الاسلامیة)
والاجرۃ لاتستحق عندنا الا باحد ثلاثة معان:
إما بشرط التعجيل، أو بالتعجيل من غير شرط، أو باستيفاء المنافع.

الفتاوي الهندية: (413/4، ط: دار الفکر)
ثم الأجرة تستحق بأحد معان ثلاثة إما بشرط التعجيل أو بالتعجيل أو باستيفاء المعقود عليه.

مجلة الأحكام العدلية: (ص: 21، ط: نور محمد کتب خانة)
(المادة: 43) : المعروف عرفا كالمشروط شرطا.

واللہ تعالیٰ أعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 52
dukan / shop per / par soda karne ki waja se / say dukan dar ka commision ka mutalba karne ka hokom /hokum?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Business & Financial

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.