عنوان: "جب استغفار کم ہو جائے تو بارشیں زیادہ ہوں گی" حدیث کی تحقیق(9809-No)

سوال: السلام علیکم، نیچے دی گئی حدیث کا کوئی حوالہ ابھی میرے پاس نہیں ہے کیا اس کی تصدیق ہو سکتی ہے؟
" قیامت کی ایک نشانی ہے: رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جب میری امت میں سے أَسْتَغْفِار کم ہو جائے گا تو بارش کا نزول زیادہ ہو جائے گا" براہ کرم اس کی تصدیق فرمادیں۔

جواب: سوال میں ذکردہ روایت تلاش کے باوجود نہیں ملی، لہذا جب تک اس کی مکمل تحقیق نہ ہوجائے، اسے حدیث کے طور پر آگے پھیلانے سے احتیاط کرنی چاہیے۔
البتہ ایک روایت میں آتا ہے کہ جناب رسول اللہ ﷺ نےارشاد فرمایا: سخت قحط اس کا نام نہیں ہے کہ تم پر بارش نہ ہو، بلکہ سخت قحط یہ ہے کہ تم پر بارش ہو مگر زمین کچھ نہ اُگائے۔
(مسلم: حدیث نمبر:2904)

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

صحيح مسلم: (رقم الحدیث: 2904، ط: دار احیاء التراث العربي)
حدثنا قتيبة بن سعيد، حدثنا يعقوب يعني ابن عبد الرحمن، عن سهيل، عن أبيه، عن أبي هريرة، أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال: ليست السنة بأن لا تمطروا، ولكن السنة أن تمطروا وتمطروا، ولا تنبت الأرض شيئا.

مسند الإمام احمد: (رقم الحدیث: 8703، 325/4)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 243
"jab istighfar kam hojai to barishain zyada hongi' hadees ki tehqeeq

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Interpretation and research of Ahadees

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.