عنوان: شوہر سے زنا سرزد ہونے پر بیوی کا شوہر کو قریب نہ آنے دینا (10783-No)

سوال: میرے شوہر نے زنا کیا ہے، جس پر انہوں نے معافی مانگ لی ہے اور آئندہ بچنے کا حلف بھی لیا ہے، لیکن میرا دل نہیں مانتا کہ وہ میرے قریب آجائے تو کیا مجھے ہمبستری نہ کرنے پر گناہ ہوگا؟

جواب: صورتِ مذکورہ میں جب آپ کے شوہر نے معافی مانگ لی ہے اور آئندہ کے لیے زنا سے بچنے کا حلف بھی اٹھا لیا ہے، لہذا آپ کے لیے جائز نہیں ہے کہ بغیر کسی شرعی عذر کے ان کو اپنے قریب نہ آنے دیں۔
احادیث مبارکہ میں بیوی کا اپنے شوہر کو جنسی تسکین پورا کرنے لیے اپنے قریب نہ آنے دینے پر سخت وعیدیں آئی ہیں، چنانچہ بخاری شریف میں حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ جناب رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا: جب شوہر اپنی بیوی کو اپنے بستر پر بلائے اور وہ آنے سے انکار کر دے تو فرشتے صبح تک اس پر لعنت بھیجتے ہیں۔ (صحیح بخاری، حدیث نمبر: 5193)
مسلم شریف کی روایت ہے کہ جناب رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا: قسم ہے اس ذات کی جس کے قبضہ میں میری جان ہے، جو شخص اپنی بیوی کو اپنے پاس بستر پر بلائے، اور وہ انکار کردے تو باری تعالی اس سے ناراض رہتا ہے، یہاں تک کہ شوہر اس (بیوی) سے راضی ہوجائے۔ (صحیح مسلم، حدیث نمبر: 1436)

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

صحیح البخاری: (رقم الحدیث: 5193، ط: دار طوق النجاۃ)
عن أبي هريرة رضي الله عنه، عن النبي صلى الله عليه وسلم قال:إذا دعا الرجل امرأته إلى فراشه، فأبت أن تجيء، لعنتها الملائكة حتى تصبح.

صحیح مسلم: (رقم الحدیث: 1436، ط: دار احیاء التراث العربی)
عن أبي هريرة، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم:والذي نفسي بيده، ما من رجل يدعو امرأته إلى فراشها، فتأبى عليه، إلا كان الذي في السماء ساخطا عليها حتى يرضى عنها.

بدائع الصنائع: (331/2، ط: دار الکتب العلمیة)
وللزوج أن يطالبها بالوطء متى شاء إلا عند اعتراض أسباب مانعة من الوطء كالحيض والنفاس والظهار والإحرام وغير ذلك، وللزوجة أن تطالب زوجها بالوطء؛ لأن حله لها حقها كما أن حلها له حقه، وإذا طالبته يجب على الزوج، ويجبر عليه في الحكم مرة واحدة والزيادة على ذلك تجب فيما بينه، وبين الله تعالى من باب حسن المعاشرة واستدامة النكاح، فلا يجب عليه في الحكم عند بعض أصحابنا، وعند بعضهم يجب عليه في الحكم.

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 605 Jul 26, 2023
shohar / khawand /mia se /say zina sarzad hone per /par biwi / zoja ka shohar ko qareeb na aane dena

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.