عنوان: والدین کی اجازت کے بغیر دوسرے ملک سفر کرنا (14577-No)

سوال: میرا سوال یہ ہے کہ اگر دو شادی شدہ بیٹے والدین کے ساتھ رہ رہے ہیں اور ان میں سے ایک کی بیوی بیرون ملک جانے کی ضد کر رہی ہے۔ کیا ان میں سے کوئی والدین کی رضامندی یا والدین کی رضامندی کے بغیر بیرون ملک منتقل ہوسکتا ہے،جبکہ دوسرا مستقبل قریب میں کہیں نہیں جا رہا ہے؟ والدین مالی اور جسمانی طور پر خود مختار ہیں، بس والد کو چلنے پھرنے میں کچھ دشواری ہوتی ہے۔

جواب: واضح رہے کہ بیٹے کے سفر پر جانے کی وجہ سے اگر والدین نان نفقہ یا بیماری اور ضعف کی صورت میں تیمار داری اور خدمت کے لیے اس کے محتاج نہ ہوں تو ایسی صورت میں بیٹے کے لیے والدین کی اجازت کے بغیر بھی سفر کرنا جائز ہے، بشرطیکہ اس سفر میں جان کی ہلاکت یا کسی مرض کے ہوجانے کا غالب گمان نہ ہو، تاہم ہر حالت میں مستحب اور بہتر یہی ہے کہ والدین کی رضامندی سے سفر کیا جائے، تاکہ دورانِ سفر ان کی دعائیں شاملِ حال رہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھندیة: (366/5، ط: دار الفکر)
وقال محمد - رحمه الله تعالى - في السير الكبير إذا أراد الرجل أن يسافر إلى غير الجهاد لتجارة أو حج أو عمرة وكره ذلك أبواه فإن كان يخاف الضيعة عليهما بأن كانا معسرين ونفقتهما عليه وماله لا يفي بالزاد والراحلة ونفقتهما فإنه لا يخرج بغير إذنهما سواء كان سفرا يخاف على الولد الهلاك فيه كركوب السفينة في البحر أو دخول البادية ماشيا في البرد أو الحر الشديدين أو لا يخاف على الولد الهلاك فيه وإن كان لا يخاف الضيعة عليهما بأن كانا موسرين ولم تكن نفقتهما عليه إن كان سفرا لا يخاف على الولد الهلاك فيه كان له أن يخرج بغير إذنهما وإن كان سفرا يخاف على الولد الهلاك فيه لا يخرج إلا بإذنهما كذا في الذخيرة.

رد المحتار: (408/6، ط: دار الفکر)
فلو في سفر تجارة أو حج لا بأس به بلا إذن الأبوين إن استغنيا عن خدمته إذ ليس فيه إبطال حقهما إلا إذا كان الطريق مخوفا كالبحر فلا يخرج إلا بإذنهما وإن استغنيا عن خدمته ولو خرج المتعلم وضيع عياله يراعى حق العيال اه

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 117 Jan 16, 2024
waldain ki ijazat ke baghair dosray mulk safar karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Characters & Morals

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.