عنوان: "میں ایک سیکولر مسلمان ہوں" کہنے والے کا حکم (102982-No)

سوال: مفتی صاحب ! السلام علیکم، میں نے غلطی سے ایک بحث میں کہا کہ میں ایک مکمل مسلم نہیں ہوں، سیکولر مسلم ہوں، اس سے میرا ایمان خراب تو نہیں ہوا؟ میرا مقصد کچھ اور کہنے کا تھا، لیکن منہ سے یہ لفظ نکل گیا۔ وضاحت فرمائیں۔

جواب: واضح رہے کہ موجودہ دور میں انسانی دنیا کو اسلام سے دور رکھنے کے لیے جو فتنے لوگوں کو اپنی لپیٹ میں لے رہے ہیں، ان میں سے ایک فتنہ الحاد و لادینیت ہے، اس فتنے کی ابتدائی شکل "سیکولرزم" ہے۔
سیکولرزم بنیادی طور پر "مذہب بیزاری" کی تحریک ہے، جو لوگ اس نظریے کے حامی ہوتے ہیں، وہ یہ سمجھتے ہیں کہ مذہب ہر انسان کا پرائیویٹ معاملہ ہے، مذہب کا زندگی کے دوسرے شعبوں (خاص طور پر مملکت اور حکومت) سے تعلق نہیں ہونا چاہیے، یہ سوچ اسلام کی آفاقیت کے سراسر متصادم اور نہایت گمراہ کن ہے۔
ایسے لوگ عموماً آخر میں (العیاذ باللہ) مذہب کو بھی اپنی ذاتی زندگی سے خیر باد کہہ دیتے ہیں، اس فتنے کی تفصیلات ویسے تو بہت زیادہ ہیں، تاہم اختصار کے ساتھ ضروری بات ذکر کر دی گئی ہے۔
لہذا سیکولرزم کی مذکورہ بالا تفصیل کے پیش نظر یہ جملہ "میں ایک سیکولر مسلمان ہوں" کہنے سے کوئی شخص دائرہ اسلام سے خارج نہیں ہوتا، البتہ یہ بات گمراہ کن ہے، لہذا اس سے توبہ واستغفار کرنا چاہیے اور آئندہ ایسا جملہ کہنے سے اجتناب کرنا چاہیے۔
نیز اسلامی تعلیمات سے ناواقفیت کی وجہ سے ہی عموماً اس طرح کے نظریات سے سادہ لوح مسلمان متاثر ہو جاتے ہیں، اس کا حل یہ ہے کہ دین کے متعلق کوئی بھی سوال ذہن میں ہو تو مستند علماء کرام سے رجوع کرنا چاہیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی القرآن الکریم:

فَسۡئَلُوۡۤا اَہۡلَ الذِّکۡرِ اِنۡ کُنۡتُمۡ لَا تَعۡلَمُوۡنَ ﴿۷﴾

(سورۃ الانبیاء، آیت: 7)

وفی مسند احمد:

حدثنا موسى بن داود حدثنا عبد الله بن عمر عن ابن شهاب عن علي بن حسين عن أبيه قال: قال رسول الله - صلى الله عليه وسلم -: "من حسن إسلام المرء تركه ما لا يعنيه".

(ج: 2، ص: 352، ط: دار الحدیث)

وفی الشامیۃ:

(و) اعلم أنه (لا يفتى بكفر مسلم أمكن حمل كلامه على محمل حسن أو كان في كفره خلاف، ولو) كان ذلك (رواية ضعيفة) كما حرره في البحر، وعزاه في الأشباه إلى الصغرى. وفي الدرر وغيرها: إذا كان في المسألة وجوه توجب الكفر وواحد يمنعه فعلى المفتي الميل لما يمنعه، ثم لو نيته ذلك فمسلم وإلا لم ينفعه حمل المفتي على خلافه

(ج: 4، ص: 229، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 177
Main aik secular musalman hoon kehnay walay ka hukm, mein, ek, muslim, hun, kehne, wale, Ruling about the one who says "I am a secular Muslim", what is someone says that he is a secular muslim

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.