عنوان: ختم نبوت کا مطلب (106139-No)

سوال: مفتی صاحب ! ختم نبوت کا کیا مطلب ہے؟

جواب: ختم نبوت کا مطلب یہ ہے کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم اللہ تعالیٰ کی طرف سے بھیجے ہوئے آخری بنی اور رسول ہیں، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کوئی شخص عہدہ نبوت پر فائز نہیں ہوگا، جو شخص آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کسی بھی قسم کی نبوت یا رسالت کا دعویٰ کرے وہ کذاب، منکر قرآن اور کافر ہے۔

قرآن کریم، احادیث متواترہ اور اجماع امت سے ثابت ہے کہ آپ خاتم النبیین ہیں، آپ کے بعد کوئی دوسرا نبی نہ ہوگا، اور آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے ظہور سے پہلے تمام انبیاء سابقین آپ کی آمد کی بشارت دیتے تھے، اور اس کا اعلان کرتے تھے کہ محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم آخر الانبیاء ہیں، اور آپ کا خاتم الانبیاء ہونا تورات ، انجیل اور تمام انبیاء سابقین کے صحیفوں میں مذکور تھا، اہل کتاب از راہ حسد ان بشارتوں کو چھپاتے تھے، پھر جو علماء اہل کتاب دین اسلام میں داخل ہوئے، انہوں نے اس امر کا اقرار اور اعتراف کیا کہ ہم نے آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کو اسی صفت پر پایا جیسا کہ تورات اور انجیل میں دیکھا اور پڑھا تھا، اور مہر نبوت آپ کے خاتم النبین ہونے کی حسی دلیل تھی، جس کو دیکھ کر علماء یہود اور نصاری آپ کی نبوت اور ختم نبوت کی شہادت دیتے تھے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تبارک و تعالیٰ:

مَا كَانَ مُحَمَّدٌ اَبَآ اَحَدٍ مِّنۡ رِّجَالِكُمۡ وَلٰـكِنۡ رَّسُوۡلَ اللّٰهِ وَخَاتَمَ النَّبِيّٖنَ ؕ وَكَانَ اللّٰهُ بِكُلِّ شَىۡءٍ عَلِيۡمًا۔
(سورۃ الاحزاب: 40)

قال الامام فی صحیحہ البخاری:

وعن أَبي هريرةَ رضی اللہ عنہ قَالَ: قالَ رَسُول اللَّه ﷺ: كَانَت بَنُو إسرَائِيلَ تَسُوسُهُمُ الأَنْبياءُ، كُلَّما هَلَكَ نَبِيٌّ خَلَفَهُ نَبيٌّ، وَإنَّهُ لا نَبِيَّ بَعدي، وسَيَكُونُ بَعدي خُلَفَاءُ فَيَكثُرُونَ۔
(رقم الحدیث: 3455)

قال الامام الترمذی فی سننه:

إنَّ الرسالةَ و النُّبوَّةَ قد انقطعتْ ، فلا رسولَ بعدي و لا نبيَّ۔
(رقم الحدیث: 2272)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 487
khatm e nabuwwat ka matlab

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.