عنوان: کیا عدت ختم ہونے کے دن کے مخصوص احکام ہیں؟(106606-No)

سوال: مفتی صاحب! جس دن عورت کی عدت ختم ہو، اس دن کے کوئی شرعی احکام ہیں؟

جواب: جس دن عورت کی عدت ختم ہوجائے٬ خاص اس دن سے متعلق کوئی مخصوص شرعی احکام نہیں ہیں٬ بلکہ عدت کے دوران جو پابندیاں تھیں (جیسے: گھر سے باہر نہ نکلنا، بناؤ سنگھار نہ کرنا اور خوشبو نہ لگانا وغیرہ) وہ ختم ہوجائیں گیں٬ اس کے علاوہ اگر کسی علاقے میں اس آخری دن کے موقع پر جو کچھ کیا جاتا ہے٬ وہ تمام رسم و رواج ہیں٬ ان کا شریعت سے کوئی تعلق نہیں ہے.

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل :

لما فی مشکوۃ المصابیح:

"قال رسول اللہﷺ من احدث فی امرنا ہذا ما لیس منہ فہو رد"

(باب الاعتصام بالکتاب والسنۃ٬ رقم الحدیث:140)

لما فی الھندیۃ:

"على المبتوتة والمتوفى عنها زوجها إذا كانت بالغة مسلمة الحداد في عدتها كذا في الكافي. والحداد الاجتناب عن الطيب والدهن والكحل والحناء والخضاب ولبس المطيب والمعصفر والثوب الأحمر وما صبغ بزعفران إلا إن كان غسيلا لا ينفض ولبس القصب والخز والحرير ولبس الحلي والتزين والامتشاط كذا في التتارخانية"

(ج: 1، ص: 533، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 448
Kiya iddat khatam hony ky din makhsoos ahkaam hain

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Iddat(Period of Waiting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.