عنوان: کیا زانی کا نکاح بغیر توبہ کے منعقد ہو جائے گا؟(107970-No)

سوال: السلام علیکم، جناب مفتی صاحب ! میرا سوال یہ ہے کہ اگر کسی مرد یا عورت میں سے کسی ایک نے شادی سے پہلے زنا کیا ہو اور وہ زنا سے توبہ کے بغیر نکاح کرلے، بچے بھی ہوجائیں تو کیا زانی اور غیر زانی کے درمیان نکاح منقعد ہوگیا؟ کیا زانی مرد یا عورت کا نکاح سے پہلے توبہ کرنا لازم اور ضروری ہے یا نہیں؟ اگر بغیر توبہ کے نکاح کرلے تو اس کا کیا حکم ہے؟ جبکہ شادی کے بعد پاک دامنی کی زندگی گزار تا ہوں۔

جواب: قرآن پاک میں اللہ تبارک وتعالیٰ نے "زنا" کی شناعت بیان کی ہے، اور احادیث میں "زنا" کو گناہِ کبیرہ قرار دیا گیا ہے، البتہ زنا کی وجہ سے آدمی کے لئے نکاح کرنا حرام نہیں ہوتا، زانی اور مزنیہ پر لازم ہے کہ سچے دل سے توبہ و استغفار کریں اور آئندہ ایسا نہ کرنے کا عزم کریں۔

صورت مسئولہ میں اگر کوئی سبب حرمت نہ ہو تو مذکورہ شخص کا نکاح درست ہوگا، اور اس کی اولاد جائز اور ثابت النسب ہوگی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تبارک و تعالیٰ:

وَ لَا تَقْرَبُوا الزِّنٰۤى اِنَّهٗ كَانَ فَاحِشَةًؕ-وَ سَآءَ سَبِیْلًا۔

(سورۃ بنی اسرائیل، رقم الآیۃ: 32)

و قال تعالٰی ایضا:

وَالْمُحْصَنَاتُ مِنَ النِّسَاءِ إِلَّا مَا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُمْ ۖ كِتَابَ اللَّهِ عَلَيْكُمْ ۚ وَأُحِلَّ لَكُم مَّا وَرَاءَ ذَٰلِكُمْ أَن تَبْتَغُوا بِأَمْوَالِكُم مُّحْصِنِينَ غَيْرَ مُسَافِحِينَ ۚ فَمَا اسْتَمْتَعْتُم بِهِ مِنْهُنَّ فَآتُوهُنَّ أُجُورَهُنَّ فَرِيضَةً ۚ وَلَا جُنَاحَ عَلَيْكُمْ فِيمَا تَرَاضَيْتُم بِهِ مِن بَعْدِ الْفَرِيضَةِ ۚ إِنَّ اللَّهَ كَانَ عَلِيمًا حَكِيمًا

(سورۃ النساء، رقم الآیۃ:24)

قال فی مختصر القدوری:

النكاح ينعقد بالإيجاب والقبول بلفظين يعبر بهما عن الماضي أو يعبر بأحدهما عن الماضي وبالآخر عن المستقبل مثل أن يقول: زوجتي فيقول زوجتك
ولا يعقد نكاح المسلمين إلا بحضور شاهدين حرين بالغين عاقلين مسلمين أو رجل و امرأتين

(ج: 1، ص: 145، ط: دار الکتب العلمیۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 191
kia zaani ka nikkah bagair touba kay munaqqid hojaiga?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.