عنوان: قربانی کرنے والے کا قربانی کا جانور دیکھنا(8003-No)

سوال: اگر قربانی کی رقم کسی گاؤں میں حصہ ڈالنے کے لیے بھجوا دی جائے، جبکہ ہم نے جانور خود نہیں دیکھا نہ قربانی ہوتے دیکھی تو کیا اس طرح قربانی کرنا جاٸز ہے؟

جواب: قربانی کرنے والے کو قربانی کا جانور دیکھنا شرعاً ضروری نہیں ہے، لہٰذا سوال میں پوچھی گئی صورت میں دوسرے گاؤں یا شہر میں حصہ ڈالنے کی صورت میں جانور اور اس کو قربان ہوتے ہوئے دیکھے بغیر بھی قربانی درست ہو جائے گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (الحج، الایۃ: 37)
لَنْ يَنَالَ اللَّهَ لُحُومُهَا وَلَا دِمَاؤُهَا وَلَكِنْ يَنَالُهُ التَّقْوَى مِنْكُمْ....الخ

رد المحتار: (318/6، ط: دار الفکر)
فلو كانت في السواد والمضحي في المصر جازت قبل الصلاة، وفي العكس لم تجز قهستاني.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 924 Jul 16, 2021
kia qurbani karne walay ko qurbani ka janwar dekhna zaroori hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.