عنوان: سردی کی وجہ سے فجر اور عشاء کی نماز کے لیے وضو کے بجائے تیمم کرنے کا حکم(108831-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! میری والدہ ساری نمازیں پڑھتی ہیں، لیکن ان سے سردیوں میں فجر اور عشاء کا وضو نہیں ہو پاتا، ٹھنڈ سے ان کی طبیعت خراب ہو جاتی ہے، گرم پانی دیا جائے، تو بھی بہت سردی لگتی ہے، تو کیا ایسی صورت میں فجر اور عشاء میں وضو کے بجائے تیمم کر سکتی ہیں؟

جواب: واضح رہے کہ اگر گرم پانی یا وضو کرنے کے بعد جسم کو حرارت پہنچانے کے لیے گرم کپڑا یا کوئی اور سبب جیسے: ہیٹر وغیرہ دستیاب ہو، تو ایسی صورت میں سردی کی وجہ سے وضو کے بجائے تیمم کرنے کی اجازت نہیں ہے، البتہ اگر گرم پانی یا گرم کپڑا وغیرہ میسر ہونے کے باوجود پانی سے وضو کرنے والے کو اپنی جان کی ہلاکت یا کسی عضو کے تلف ہوجانے یا بیمار ہوجانے کا غالب گمان ہو، تو ایسا شخص تیمم کرسکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
الدلائل:

الدر المختار وردالمحتار: (234/1، ط:دار الفکر)
(ﺃﻭ ﺑﺮﺩ) ﻳﻬﻠﻚ اﻟﺠﻨﺐ ﺃﻭ ﻳﻤﺮﺿﻪ ﻭﻟﻮ ﻓﻲ اﻟﻤﺼﺮ ﺇﺫا ﻟﻢ ﺗﻜﻦ ﻟﻪ ﺃﺟﺮﺓ ﺣﻤﺎﻡ ﻭﻻ ﻣﺎ ﻳﺪﻓﺌﻪ، ﻭﻣﺎ ﻗﻴﻞ ﺇﻧﻪ ﻓﻲ ﺯﻣﺎﻧﻨﺎ ﻳﺘﺤﻴﻞ ﺑﺎﻟﻌﺪﺓ ﻓﻤﻤﺎ ﻟﻢ ﻳﺄﺫﻥ ﺑﻪ اﻟﺸﺮﻉ، ﻧﻌﻢ ﺇﻥ ﻛﺎﻥ ﻟﻪ ﻣﺎﻝ ﻏﺎﺋﺐ ﻳﻠﺰﻣﻪ اﻟﺸﺮاء ﻧﺴﻴﺌﺔ ﻭﺇﻻ ﻻ۔

(ﻗﻮﻟﻪ ﻳﻬﻠﻚ اﻟﺠﻨﺐ ﺃﻭ ﻳﻤﺮﺿﻪ) : ﻗﻴﺪ ﺑﺎﻟﺠﻨﺐ؛ ﻷﻥ اﻟﻤﺤﺪﺙ ﻻ ﻳﺠﻮﺯ ﻟﻪ اﻟﺘﻴﻤﻢ ﻟﻠﺒﺮﺩ ﻓﻲ اﻟﺼﺤﻴﺢ ﺧﻼﻓﺎ ﻟﺒﻌﺾ اﻟﻤﺸﺎﻳﺦ ﻛﻤﺎ ﻓﻲ اﻟﺨﺎﻧﻴﺔ ﻭاﻟﺨﻼﺻﺔ ﻭﻏﻴﺮﻫﻤﺎ. ﻭﻓﻲ اﻟﻤﺼﻔﻰ ﺃﻧﻪ ﺑﺎﻹﺟﻤﺎﻉ ﻋﻠﻰ اﻷﺻﺢ، ﻗﺎﻝ ﻓﻲ اﻟﻔﺘﺢ ﻭﻛﺄﻧﻪ ﻟﻌﺪﻡ ﺗﺤﻘﻴﻖ ﺫﻟﻚ ﻓﻲ اﻟﻮﺿﻮء ﻋﺎﺩﺓ. اﻩـ۔۔۔

ﺃﻗﻮﻝ: اﻟﻤﺨﺘﺎﺭ ﻓﻲ ﻣﺴﺄﻟﺔ اﻟﺨﻒ ﻫﻮ اﻟﻤﺴﺢ ﻻ اﻟﺘﻴﻤﻢ ﻛﻤﺎ ﺳﻴﺄﺗﻲ ﻓﻲ ﻣﺤﻠﻪ - ﺇﻥ ﺷﺎء اﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﻰ - ﻧﻌﻢ ﻣﻔﺎﺩ اﻟﺘﻌﻠﻴﻞ ﺑﻌﺪﻡ ﺗﺤﻘﻴﻖ اﻟﻀﺮﺭ ﻓﻲ اﻟﻮﺿﻮء ﻋﺎﺩﺓ ﺃﻧﻪ ﻟﻮ ﺗﺤﻘﻖ ﺟﺎﺯ ﻓﻴﻪ ﺃﻳﻀﺎ اﺗﻔﺎﻗﺎ، ﻭﻟﺬا ﻣﺸﻰ ﻋﻠﻴﻪ ﻓﻲ اﻹﻣﺪاﺩ؛ ﻷﻥ اﻟﺤﺮﺝ ﻣﺪﻓﻮﻉ ﺑﺎﻟﻨﺺ، ﻫﻮ ﻇﺎﻫﺮ ﺇﻃﻼﻕ اﻟﻤﺘﻮﻥ۔

الفتاوی الھندیۃ: (28/1،ط:دار الفکر)
ﻭﺇﺫا ﺧﺎﻑ اﻟﻤﺤﺪﺙ ﺇﻥ ﺗﻮﺿﺄ ﺃﻥ ﻳﻘﺘﻠﻪ اﻟﺒﺮﺩ ﺃﻭ ﻳﻤﺮﺿﻪ ﻳﺘﻴﻤﻢ. ﻫﻜﺬا ﻓﻲ اﻟﻜﺎﻓﻲ ﻭاﺧﺘﺎﺭﻩ ﻓﻲ اﻷﺳﺮاﺭ ﻟﻜﻦ اﻷﺻﺢ ﻋﺪﻡ ﺟﻮاﺯﻩ ﺇﺟﻤﺎﻋﺎ ﻛﺬا ﻓﻲ اﻟﻨﻬﺮ اﻟﻔﺎﺋﻖ ﻭاﻟﺼﺤﻴﺢ ﺃﻧﻪ ﻻ ﻳﺒﺎﺡ ﻟﻪ اﻟﺘﻴﻤﻢ. ﻛﺬا ﻓﻲ اﻟﺨﻼﺻﺔ ﻭﻓﺘﺎﻭﻯ ﻗﺎﺿﻲ ﺧﺎﻥ.

امداد الفتاوی:۔ (کتاب الطھارۃ،97/1،ط: مکتبہ دارالعلوم کراچی)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Purity & Impurity

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com