عنوان: ایک دوسرے کو چاہنے والوں کی شادیاں کہیں اور ہوجائیں تو کیا جنت میں وہ ایک ساتھ رہ سکیں گے؟(109061-No)

سوال: ہم دنیا میں جسے پسند کرتے ہیں، مگر اس سے شادی نہ ہوئی ہو، دونوں کی کہیں اور ہو جاۓ اور وہ دونوں چاہتے ہوں کہ جنت میں ساتھ رہیں تو کیا ایسا ہوسکتا ہے؟ یا دنیا میں جس سے شادی کروائی گئ تھی، جنت میں بھی اسی کے ساتھ ہوں گے؟ رہنمائی فرمادیں۔

جواب: نامحرم کے ساتھ جو محبت کی جاتی ہے، در حقیقیت وہ خواہش ہوتی ہے، نہ کہ محبت، جبکہ شریعت میں خواہشاتِ نفسانیہ کی پیروی کرنے سے منع کیا گیا ہے، لہٰذا نامحرم سے ناجائز رابطے اور تعلقات رکھنا خواہشاتِ نفسانیہ میں داخل ہے، جس کی اصلاح ضروری ہے، یہ عمل تو جنت سے دور کرنے والا ہے، اس کی بنیاد پر جنت میں جوڑی بنائے جانے کا سوال ہی کیسے پیدا ہوسکتا ہے؟

شریعت میں تو یہی بات ثابت ہے کہ جو میاں بیوی نیک ہوں گے، اور جنت میں داخل ہوں گے، تو جنت میں اپنی رضامندی سے ایک ساتھ ہی رہیں گے، ان کو کمال درجے کی خوبصورتی دی جائے گی، ان کی آپس میں لازوال محبت و الفت پیدا کردی جائےگی، اور وہ وہاں ایک ساتھ خوش رہیں گے۔

بخاری شریف کی حدیث مبارکہ میں جو یہ بات آئی ہے کہ "انسان اسی کے ساتھ ہوگا، جس سے محبت کرتا ہے،" تو اس سے مراد پاکیزہ محبت ہے، یعنی وہ محبت جو اللہ کے لیے کی جائے، خود امام بخاری یہ حدیث "باب الحب في اللہ" کے عنوان کے تحت لائے ہیں۔
البتہ میاں بیوی کی باہمی محبت اس میں داخل ہے، کیوںکہ وہ ایک حلال اور پاکیزہ رشتے سے وجود میں آتی ہے، جو بہرحال مطلوب ومقصود ہے۔
اس لیے اس دنیا میں بھی میاں بیوی کو ایک دوسرے کے ساتھ مکمل وفا، خلوص، اور محبت و مودت کے ساتھ رہنا چاہیے۔

دلائل:




القرآن الکریم:(سورۃالزخرف،الآیات:70-72)
ادْخُلُوا الْجَنَّةَ أَنْتُمْ وَأَزْوَاجُكُمْ تُحْبَرُونَ (70) يُطَافُ عَلَيْهِمْ بِصِحَافٍ مِنْ ذَهَبٍ وَأَكْوَابٍ وَفِيهَا مَا تَشْتَهِيهِ الْأَنْفُسُ وَتَلَذُّ الْأَعْيُنُ وَأَنْتُمْ فِيهَا خَالِدُونَ (71) وَتِلْكَ الْجَنَّةُ الَّتِي أُورِثْتُمُوهَا بِمَا كُنْتُمْ تَعْمَلُونo

وقال اللہ ایضاً:(سورۃ الروم،الآیۃ:21)
وَمِنْ آيَاتِهِ أَنْ خَلَقَ لَكُمْ مِنْ أَنْفُسِكُمْ أَزْوَاجًا لِتَسْكُنُوا إِلَيْهَا وَجَعَلَ بَيْنَكُمْ مَوَدَّةً وَرَحْمَةً إِنَّ فِي ذَلِكَ لَآيَاتٍ لِقَوْمٍ يَتَفَكَّرُونَo

صحيح البخاري:(39/8،رقم الحديث:6168،ط:طبع السلطانية)
عن ‌عبد الله عن النبي صلى الله عليه وسلم أنه قال: «‌المرء ‌مع ‌من ‌أحب.

عمدة القاري:(باب ‌الحب ‌في ‌الله،121/22،ط:دار إحياء التراث العربي)
أي: هذا باب في بيان ‌الحب ‌في ‌الله أي: في ذات الله لا يشوبه الرياء والهوى.
قوله: (حدثنا آدم ... مطابقته للترجمة تؤخذ من قوله لا يحبه إلا لله

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.