عنوان: مغرب کی نیت سے نماز شروع کرنے کے بعد عشاء کی نیت کرنے کا حکم (9616-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! ایک شخص نماز کی امامت کے لئے کھڑا ہوا، اور ایک مقتدی ساتھ تھا، عشاء کی نماز کا وقت تھا، لیکن امام کے ذہن میں تھا کہ ہمیں مغرب پڑھنی ہے، نماز شروع کی، دوسری رکعت کیلئے اٹھتے ہوئے، امام کے ذہن میں آگیا کہ میں تو مغرب پڑھ چکا ہوں، اس نے عشاء کی نیت سے 4 رکعتیں ادا کیں، تاہم وقت فارغ ملنے پر احتیاطاً اس نے نماز عشاء لوٹا دی، لیکن مقتدی کو نہیں بتایا۔ براہ کرم رہنمائی فرمائیں کہ کیا مقتدی کی نماز ہوگئی یا اسے بھی واپس ادا کرنی ہوگی؟

جواب: واضح رہے کہ نیت دل کے ارادے کا نام ہے، چونکہ نماز شروع کرتے وقت امام نے عشاء کی نماز کے بجائے مغرب کی نماز کی نیت کی تھی، لہذا مغرب کی نماز کی نیت سے عشاء کی نماز ادا نہیں ہوئی، اور دوران نماز نیت تبدیل کرنے کا بھی اعتبار نہیں ہے، بلکہ ایسی صورت میں نماز کی درستگی کے لیے ازسرنو عشاء کی نیت سے تکبیر تحریمہ کہنا ضروری ہے۔
سوال میں ذکر کردہ صورت میں چونکہ امام و مقتدی دونوں کی عشاء کی نماز ادا نہیں ہوئی ہے، جس کی قضا دونوں پر لازم ہے، لہذا امام کی ذمہ داری ہے کہ مقتدی کو بھی مطلع کرے، تاکہ وہ بھی اپنی نماز دہرائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (کتاب الصلاة، باب شروط الصلاة، 415/1- 417، ط: دار الفکر)

(والمعتبر فيها عمل القلب اللازم للإرادة) فلا عبرة للذكر باللسان إن خالف القلب لأنه كلام لا نية إلا إذا عجز عن إحضاره لهموم أصابته فيكفيه اللسان مجتبى (وهو) أي عمل القلب (أن يعلم) عند الإرادة (بداهة) بلا تأمل۔
(قوله ولا عبرة بنية متأخرة) لأن الجزء الخالي عن النية لا يقع عبادة فلا ينبني الباقي عليه، وفي الصوم جوزت للضرورة، حتى لو نوى عند قوله الله قبل أكبر لا يجوز لأن الشروع يصح بقوله الله فكأنه نوى بعد التكبير حلية عن البدائع.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 32
maghrib ki niat / niyat se / say namaz shuro karne / karnay k / kay bad isha ki niat / niyat karne ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.